خوف کیا ہے اور خوف سے نجات کیسے پائی جائے What is Fear and How to Get Rid of Fear

nomadthoughtsofeast

nomadthoughtsofeast

 خوف دراصل ہماری ایک ایسی ہیجانی سی کیفیت ہوتی ہے جس میں ہم خوفزدہ کرنے والی چیزوں سے دور بھاگنا چاہتے ہیں۔ خوف حقیقت میں ایک اندھیرے کے علاوہ شاید کچھ اور نہیں۔ دراصل لاعلمی اور جہالت ایک اندھیرہ ہے۔ جب کوئی شے ہمیں ضرر پہنچارہی ہو اور ہمیں علم نہ ہو کہ اس شے یا ان اشیاء کے ضرر سےکیسے بچ سکیں تو ہم ان اشیاء کے خوف میں مبتلا ہو جاتے ہیں اور جب ہمارا شعور اور آگاہی بڑھتی ہے تو خود بخود ان ضرر رساں اشیاء سے ہمارا خوف دور ہو جاتا ہے۔

مثال کے طور پر ہم میں سے اکثر لوگ اپنے جسم میں کسی بیماری کی علامات کو محسوس کرتے ہیں لیکن ہم میں پوری طرح آگاہی نہیں ہوتی کہ اصل میں ہم میں بیماری کیا ہے تو ہم وہم اور خوف میں مبتلا ہو جاتے ہیں اور نیم حکیم خطرہ جان کے مصداق اپنے میں بڑی بیماری کی علامات سمجھتے ہوئے ڈاکٹر سے رجوع کرنے سے بھی ڈرتے ہیں کہ اگر اس نے بیماری کی تصدیق کر دی تو کیا ہو گا؟

اور اکثر اوقات ہوتا کچھ نہیں کیونکہ جن بیماریوں کو ہم اپنے پہ لاگو کئے بیٹھے تھے اور خوف اور وہم میں مبتلا تھے وہ بیماری یا بیماریاں دراصل ہم میں ہوتی نہیں اور جب تک ڈاکٹر ہمارا وہم رفع نہ کر دے اور ہمارے شعور کو حقیقت سے روشناس نہ کرا دے، ہم خوف اور وہم ہی میں مبتلا رہتے ہیں۔

انسان کا سب سے بڑا خوف شاید کہ موت کا خوف ہے۔ کیونک ہم انسان اپنے عام فہم میں نہیں جان سکتے کہ مرنے کے بعد کیا ہوگا؟ اس لئے ہم موت سے دور بھاگتے ہیں اور مرنا نہیں چاہتے۔ تاہم اہل ایمان جنھہوں نے اپنا شعور قرآن اور حدیث کے علوم کی روشنی سے منور کیا ہو، وہ تو موت کے خوف سے بھی بے خوف ہو جاتے ہیں کیونکہ وہ یہ یقین رکھتے ہیں کہ اس دنیاوی زندگی کے بعد جو زندگی ہے وہی اصل زندگی ہے اور یہ والی دنیا دراصل آخرت کی کھیتی ہے۔

یہ یقین والے لوگ حقیقتا ایمان یا یقین ہی تو رکھتے ہیں اور اسی لیئے موت سے بھی ان کا خوف نکل جاتا ہے۔ سو خوف کا علاج علم ہے اور علم بھی وہ جو سچائی اور حقیقت پر مبنی ہو، نہ کہ اس سراب کی مانند جو دور سے تو حقیقت معلوم ہوتا ہے لیکن قریب پہنچنے پر نظر کا دھوکا ثابت ہوتا ہے۔

Author

  • Freelance Accountant, Full Charge Bookkeeper, Financial Analyst, and Ex Banker with 15 Years of Professional Experience. Also a Blogger...

Related Post