برطانیہ میں پھیلی بیماری کی حالیہ خطرناک لہر سے نظام زندگی بگڑ گیا Britain Disturbing Situation Due to Deadly Disease

London Panic Shopping

London Panic Shopping

دنیا میں تباہی پھیلاتا خطرناک وائرس برطانیہ میں ایک نیا ہی روپ لے چکا ہے جس کی وجہ سے وہاں پر بیماری کے پھیلاو کی شرع 70 فیصد تک بڑھ چکی ہیں۔ بیماری کے اس نئے روپ کی وجہ سے برطانیہ بھر میں کرسمس کی خوشیاں مناتے لوگوں کو ناگہانی مسائل کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے جس سے ان کی خوشیاں ماند پڑ گئی ہیں۔ وہاں پر لوگ اس بات سے بھی خوش تھے کہ مدافعتی دوائی لگانے کا عمل ابھی کچھ ہی دنوں پہلے شروع ہوا تھا لیکن اس کا اثر بیماری کے اس نئے بدلے روپ پر بے اثر ثابت رہا ہے۔برطانیہ بھر میں شاپنگ مالز پر لمبی لمبی قطاریں لگی ہوئی ہیں اور لوگ ضروریات زندگی کے لیے پریشان حال اسٹوروں کے چکر کاٹ رہے ہیں۔ ایک حیران کن لیکن قابل توجہ بات جو سامنے آئی ہے وہ یہ کہ لوگوں کو سب سے اہم جس چیز کی ضرورت پیش آ رہی ہے وہ ٹائلٹ رول ٹشو پیپرز ہیں اور اس معمولی سی چیز کو حاصل کرنے کے لئے لوگ ایک دوسرے سے سبقت کی کوشش کر رہے ہیں۔ دراصل ٹائلٹ رول ہی وہاں کی معمول کی زندگی میں رفع حاجت کے بعد صفائی کا بنیادی زریعہ ہیں اور اسی وجہ سے لوگوں میں ٹائلٹ رول کی طلب اور مانگ بہت بڑھ چکی ہے۔دنیا کے کچھ ممالک کی طرف سے برطانیہ کے ساتھ سرحدوں پر آمدورفت کی روک لگائی گئی تھی اور اس وجہ سے بھی بہت سے مقامی اسٹوروں پر اشیائے ضروریات شیلفوں پر سیل کے لیے مہیا نہیں رہیں۔ تاہم اچھی خبر یہ ہے کہ اب یورپ کے بہت سے ممالک نے مناسب طریقے سے اسکیننگ کے بعد تجارتی عمل کے لیے سرحدوں کو کھولنے کی منظوری دے دی ہے۔ جس کی وجہ سے برطانیہ کے رہنے والے لوگوں کے چہروں پر دوبارہ سے خوشیاں لوٹ آئیں ہیں۔ تاہم ابھی بھی لوگ ڈرے سہمے ہوئے بیٹھے ہیں اور اس کی وجہ یہی خطرناک بیماری ہے۔برطانیہ بھر میں لاک ڈاؤن لگا دیا گیا ہے اور اس دوران صرف انتہائی ضرورت کے لیے ہی لوگوں کو گھروں سے نکلنے کی اجازت ہے۔ تاہم تحقیق کار اور سائنٹسٹس مسلسل ان کوششوں میں جڑے ہیں کہ اس بڑھتے خطرے کو کامیابی سے شکست دے دیں تاکہ زندگی کی رونقیں بحال ہو سکے اور نظام زندگی اسی طرح سے یا اس سے بہتر طریقے سے رواں دواں ہو سکے جیسا کہ دسمبر 2019 سے پہلے تھا۔ چنانچہ امید کی جانی چاہیے کہ جلد ہی سائنسدان کسی حتمی نتیجے پر پہنچ کر برطانیہ اور تمام دنیا کے انسانوں کو اس بڑھتی تباہی اور خطرے سے نجات دلانے میں کامیابی حاصل کر لیں گے۔ 

Author

  • Freelance Accountant, Full Charge Bookkeeper, Financial Analyst, and Ex Banker with 15 Years of Professional Experience. Also a Blogger...

Related Post