Grow Trees to Earn Huge Revenue درخت لگائیں پیسہ بنائیں

Grow Tree

Grow Tree

دوستو آج ہم اپکے لیے سرمایہ کاری کرنے کا ایک منفرد اور نفع بخش طریقہ لے کر آئے ہیں۔ جی ہاں۔ اور وہ ہے شجرکاری۔ اگر آپ کے پاس سرمایہ ہے اور آپ اسے ایسے طریقے سے استعمال کرنا چاہتے ہیں کہ آپکی اصل رقم بھی محفوظ رہے اور یقینی نفع بھی حاصل ہو۔ تو شجرکاری ایسی سرمایہ داری کا بہترین ذریعہ ہے۔                                                                              
 آپ سب کو معلوم ہوگا کہ پچھلے دنوں حکومتِ پاکستان نے درخت لگاو پاکستان بچاو کے نام سے ایک مہم چلائی جسکے مطابق ہر پاکستانی کے ذمے چالیس سے پچاس درخت لگانے تھے۔ یہ ایک اچھا فیصلہ تھا۔ لیکن   لیکن اگر ہم ایسے درخت لگائیں جو کہ جو پھل دار ہو یہ ایسے درخت  جن کی ویلیو زیادہ جنکی لکڑی کارآمد ہو تو تو ہم ان درختوں سے دو فائدے حاصل کر سکتے ہیں۔  ایک تو ہم ان کے ذریعے اپنے ملک کو سرسبز و شاداب بنا سکتے ہیں اس کی خوبصورتی میں اضافہ کر سکتے ہیں اور ساتھ ہی ساتھ ہوائی آلودگی پر باآسانی قابو پایا جا سکتا ہے۔                                
اس کے علاوہ دوسرے ہم ان درختوں سے کثیر نفع بھی حاصل کر سکتے ہیں ۔ جیسے کہ اگر آپ ڈرائی فروٹس کے درختوں پہ سرمایہ کاری کرتے ہیں جیسے کہ بادام، پستہ، چلغوزہ،  اخروٹ وغیرہ۔ تو یہ ایسے درخت ہیں جنکا پھل اور لکڑی دونوں فائدہ مند ہیں۔اور انہیں کافی عرصے تک باآسانی محفوظ رکھا جا سکتا ہے۔ ایسے درختوں کی بڑے پیمانے پر شجرکاری کرنے سے ایک تو ہمارا ملک انکی پیداوار میں خود کفیل ہو جائے گا۔ دوسرا ہم ان پھلوں کی ایکسپورٹ سے کثیر زرِمبادلہ بھی کما سکتے ہیں۔                                                                                            
اسکے علاوہ آپ درختوں اور انکی لکڑی کو بیچ کر بھی اپنا سرمایا اور نفع کیش کروا سکتے ہیں۔ اوسطاً پانچ سے چھ سال میں ایک درخت تیار ہوتا ہے اور ایک درخت کی قیمت تقریباً  دوسو ڈالر ہے۔ تو اگر آپ پانچ سو درخت بھی لگاتے ہیں تو آپ انکو بیچ کر بیس میلن تک کا زرِمبادلہ کما سکتے ہیں۔ یہ کافی نفع بخش اور محفوظ ذریعہ ہے سرمایہ کاری کا جس میں آپکی اصل رقم ڈوبنے کا خطرہ بھی کم سے کم ہے۔  تو شجر کاری کیجئے پیسا کمائیے اور ملک کو خوشحال بنائیے۔                                                                                                                            

Related Post