جنت میں موجود نعمتیں Blessings of Jannah

jannah

jannah

جنت میں اللہ تعالیٰ نے اپنے دوستوں کے لیے بے شمار نعمتیں میسر کی ہیں جن کا تصور تک اس دنیا میں ممکن نہیں۔ دنیا میں نیک اعمال کرنے والے اور اللہ کی رحمت کے حقدار بننے والے جنت میں داخل کیے جائیں گے۔ ایک حدیث شریف کے مطابق وہ شخص جنت میں داخل نہیں ہو سکتا جس کے قلب میں رائی کے زرے کے برابر بھی غرور ہو گا۔ جنت دراصل ہمیشہ ہمیشہ کی زندگی کا نام ہے جس میں موت کا تصور نہیں ہے، کیونکہ آخرت میں اللہ تعالیٰ موت کو ہی موت دے دے گا۔ جنت کا ایک نام دار اسلام یعنی سلامتی والا گھر ہے۔ جنت کا ایک اور نام دارالمتقین یعنی نیک لوگوں کے رہنے کی جگہ ہے۔ جنت کا ایک اور نام دارالقرار یعنی سکون کی جگہ بھی ہے۔ اسی طرح سے جنت کے کئی اور نام بھی ہیں۔

قرآن پاک کی تعلیمات کی روشنی میں اللہ اور اس کے رسولوں پر ایمان لانے والے اور نیک و صالح اعمال کرنے والے لوگ جنت میں داخل کیے جائیں گے۔ جنت میں موجود پھل اور ان کی شکلیں دنیا میں موجود پھلوں سے مشابہ ہو نگی۔ جنت میں موجود عورتیں تمام ظاہری و باطنی آلائشوں سے پاک ہو نگیں۔ جنت کی زندگی لازوال اور ہمیشہ ہمیشہ رہنے والی ہے۔ جنتی لوگوں کے لیے سب سے بڑی اور اعلیٰ نعمت اللہ تعالیٰ کا دیدار ہو گا۔ اللہ تعالیٰ کی رحمت سے جنتی لوگوں کے دلوں سے آپس کی کدورت ہمیشہ ہمیشہ کے لیے دور کر دی جائے گی۔ اہل جنت کو کبھی بھوک اور پیاس کی شدت یا حاجت محسوس نہ ہو گی بلکہ ان کا جو جی چاہے گا کھاتے پیتے رہیں گے۔

جنت میں ہمیشہ ایک سا اور خوشگوار موسم رہے گا۔ نیک خاندان کے افراد جنت میں ایک ہی جگہ پر اکٹھے کر دیے جائیں گے۔ اہل جنت، جنت میں کسی قسم کی تھکاوٹ محسوس نہیں کریں گے اور نہ ہی کبھی بھی جنت سے نکالے جائیں گے۔ جنتی لوگوں کے ساتھ بہت ہی عزت اور شرف کا معاملہ پیش آئے گا اور اللہ تعالیٰ کی جانب سے سلام پیش کیا جائے گا۔ جنتی لوگوں کو شفاف شراب طہورہ پیش کی جائے گی جس کے پینے سے کوئی تلخی نہیں اٹھے گی اور ہوش قائم رہیں گے۔ بے مثال حسن و جمال کا مرقع حورین سے جنتی مردوں کو نوازا جائے گا جو کہ شرمیلی، موٹی آنکھوں والیاں، اور اپنے شوہروں کی ہم عمر ہونگیں۔ جنت کی نعمتیں ہمیشہ ہمیشہ کے لیے ہیں جن میں کبھی کمی نہیں آئے گی۔

جنتی جوڑوں کے سامنے سونے کے تھالوں اور ساغروں میں انواع واقسام کے کھانے اور شرابیں پیش کی جائیں گیں۔ جنت میں ہر وہ شے موجود ہو گی جس سے روح و قلب کو فرحت اور سکون ملے۔ جنت کے آٹھ مختلف دروازے ہیں جن میں سے درجہ بدرجہ مختلف نیک اعمال کرنے والوں کو گزارہ جائے گا۔ جنت کے سو مختلف درجات بھی ہیں۔ سب سے اعلیٰ درجے کی جنت، جنت الفردوس ہے۔ حدیث پاک کا مفہوم ہے کہ اللہ تعالیٰٰ سے جب بھی مانگو، جنت الفردوس مانگو۔ حوض کوثر سے رسول پاک صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم مومنین کو اپنے ہاتھوں سے جام کوثر پیش کریں گے۔ اہل جنت کے لیے سب سے بڑی نعمت اللہ تعالیٰ کا دیدار نصیب ہونا ہے۔ اللہ تمام مسلمانوں کو جنت میں جانا اور اللہ کے دیدار کی نعمت عطا فرمائے۔

Author

  • Freelance Accountant, Full Charge Bookkeeper, Financial Analyst, and Ex Banker with 15 Years of Professional Experience. Also a Blogger...

Related Post