زندگی میں درست فیصلہ سازی کی اہمیت، ڈیٹا اور انفارمیشن کے ذریعے درست فیصلوں کا تعین How to Become an Accurate Decision Maker, Probability and Data Science

decision making data science

decision making data science

ہم انسان زندگی کے ہر مرحلے پر فیصلے لیتے ہیں۔ ہمارے کچھ فیصلے ہماری زاتی زندگیوں تک محدود ہوتے ہیں تو اسی طرح زندگی میں ہمارے رول کے مطابق ہمارے کچھ فیصلوں کا اظلاق بہت وسیع پیمانے پر بھی ہوتا ہے۔ فیصلے چھوٹے درجے پر ہوں یا پھر بڑے درجے کے، فیصلے درست، بروقت اور قابل عمل ہونے چائیں۔

فیصلہ سازی کی ایک سادہ سی مثال موسم کے تغیر سے لی جاسکتی ہے۔ کسی وقت ہم گھر سے باہر نکلنے لگیں تو گہرے بادل دیکھ کر چھتری ہمراہ لے لیتے ہیں۔ کیونکہ ہمارہ ماضی کا تجربہ ہمیں یہ سکھلا چکا ہوتا ہے کہ اس طرح کے موسم میں بارش کا امکان ہے۔ تاہم بارش کا ہونا یا نہ ہونا اللہ کی مرضی پر منحصر ہے، تاہم جب قرآئن ظاہر ہوں تو تجربہ کار لوگ اپنے ماضی کے سیکھے گیان کی وجہ سے حالات کے مطابق تمام اختیاط برؤکار لاتے ہیں۔

بارش کا ہونا یا نہ ہونا ایک ایونٹ ہے اور تمام ایونٹس اللہ کی مرضی اور منشاء پر منحصر ہیں، جبکہ چھتری ہمراء لینا یا نہ لینا ہمارا اپنا ڈیسین یا فیصلہ ہوتا ہے۔ ایک زیرک شخص قرآئن دیکھ کر حالات کا درست تعین کرنے کے قابل ہو جاتا ہے اور پھر درست فیصلہ سازی کے قابل ہوتا ہے۔ اسی بناء پر ایک زیرک فیصلہ ساز کو ہی عموما فیصلہ سازی کے کلیدی عہدوں پر براجماں کیا جاتا ہے تاکہ معاملات کی درست پیش بندی کرتے ہوئے اپنے متعلقہ تمام امور اور معاملات کو اچھے سے اور دانشمندی سے سنبھالے رکھے۔ جب، جب ہمارے فہم میں ماضی کے تجربات کا ڈیٹا بڑھتا جاتا ہے، اگر ہم میں قابلیت ہو تو پھر ہم انتہائی درست اندازے لگانے اور تخمینے بنانے کے قابل ہو جاتے ہیں۔

اگر ہم بزنس یا کاروبار کے نقطہٗ نظر سے دیکھیں تو بڑے کاروباری حضرات اور انڈیسٹریلسٹ وغیرہ اس کوشش میں ہوتے ہیں کہ انتہائی زیرک اور معاملہ فہم لوگوں کو اپنی کاروباری ٹیم کا حصہ بنائیں تاکہ ان کے کاروباری معاملات سہل طریقے سے اور ایک روانی کے ساتھ آگے بڑھتے رہیں۔ ایم بی اے کی ڈگری بھی دراصل انھی کاروباری تجربات کے نچور کو طلباء کو سکھلانے کا ایک طریقہ ہے تاکہ بزنس گریجویٹس میں کاروباری فراست کی نمو ہو اور اس میں وقت کے ساتھ اضافہ بھی ہو۔

فیصلہ سازی میں ڈیٹا اور انفارمیشن کا کلیدی کردار ہے۔ جیساکہ اگر ہمارے پاس یہ انفارمیشن ہو کہ پجھلے سال نومبر کے مہینے میں ہماری کون سی پروڈکٹ کی کتنی سیل یا بکری ہوئی تھی تو اس کے مطابق ہم موجودہ سال کی سیل کا بھی تخمینہ لگا سکتے ہیں۔ اگر اس سال معیشت کے کچھ اور فیکٹرز بھی سیل پر اثر انداز ہو رہے ہوں تو ان فیکٹرز جیسا کہ کرنسی ریٹ وغیرہ کو بھی پریڈکٹو اینالیسز یا مستقبل کے تخمینے کے لئیے شامل کر سکتے ہیں۔ آج کے دور میں ڈیٹا سائینس آئی ٹی اور بزنس سٹڈیز کا وہ ملا جلا ڈسپلن ہے جس کہ ذریعے سے آئی ٹی کے ٹولز کو استعمال کرتے ہوئے درست تخمینوں کے تعین کی کوشش کی جاتی ہے اور اس میں ماضی کی متعلقہ انفرمیشنن اور ڈیٹا درست ترین اندازوں کے لئے بناد مہیا کرتا ہے۔ 

Related Post