لیڈر کون ہوتا ہے اور کیا کرتا ہے؟ Who is a Leader and What He Does

leadership

leadership

انسان کے لئے شاید اکیلے طور پر جینا ناممکن ہے اور انسانی تہذیب مجموعیت کا مجموعہ ہے۔ تنہاء شخص، انسان دشمن و انسان نما حیوانی و شیطانی قوتوں کا آسان ترین ہدف بن جاتا ہے۔ سو انسان کے سروائیول کے لئے ضروری ہے کہ وہ گروہ کی صورت میں رہے۔ نوع انسانی کا جو گروہ جتنا آپس میں منسلک اور باربط ہو گا، اتنا ہی وہ گروہ یا جماعت اپنے مشترکہ مقاصد کے حصول میں کامیاب ہو سکے گی۔

یہاں پر لیڈرشپ یا قیادت کا کردار واضح ہوتا ہے۔ ایک کامیاب لیڈر اپنے لوگوں یا ماننے والوں کے درمیان ایک بہترین ربط اور  مطابقت بنانے میں کامیاب رہتا ہے جس کی وجہ سے وہ انسانی گروہ یا جماعت یک سوئی سے اپنے مشترکہ مقاصد اور اہداف کے حصول کے لئے تندہی سے کام میں جت جاتی ہے اور اکثر تقدیر بھی انھی کے حق میں جاتی ہے جو اپنے سے جتنے ذیادہ مخلص اور با وفاء ہوتے ہیں۔

لیڈرشب بنیادی طور پر دو طرح کے لوگوں کو لیڈ کرتی ہے، اچھے لوگوں کی جماعت کو، اور برے لوگوں کی جماعت کو۔ایک حزب اللہ ہوتی ہے اور دوسری حزب الشیطان۔ ان دونوں طرح کی جماعتوں اور ان کی لیڈرشپ کے درمیان پہلے دن سے مثابقت کا عمل جاری ہے اور تا قیامت جاری رہے گا۔ حزب الشیطان ہمارا موجودہ موضوع نہیں، لیکن حزب اللہ کی لیڈرشپ کے مختلف پہلوؤں پر غور اور تدبر ضروری ہے۔

حزب اللہ کی لیڈرشپ کا بنیادی وصف ان میں انصاف پسندی کا ہونا اور جماعت کے درمیان سچائی، ایمانداری اور انصاف کے بنیادی اصولوں کے تحت فیصلے کرنا، ان کو اپنے جیسے ہی انسانوں کی غلامی سے نکالنا تاکہ وہ توحید پرست اور مواحد بن کے ایک احد اللہ کے قرآن اور احادیث میں موجود اصولوں کے مطابق آپ میں معاملات کے فیصلے اور قصیے کریں جس سے ہر فرد واحد کو اس کے تمام کے تمام انسانی، سماجی، معاشرتی و معاشی حقوق مل سکیں۔ 

حزب اللہ کی لیڈرشپ یہ بھی ممکن بناتی ہے کہ ظالمین کا یاتھ ظلم کرنے سے روکا جائے تاکہ ظالمین کی گوشمالی ہو سکے اور معاشرے کے کمزور، پسے ہوئے، لاچار اور بے بس طبقہ کو بھی اسی طرح ان کے حقوق گھروں کی دہلیز تک ممکن ہو سکیں  جو حقوق معاشرے کے ہر طبقے کا انسانی حق ہوتے ہیں۔ لیکن اس کے لئے حزب اللہ کی لیڈرشپ کا بنیادی وصف ان میں رحمدلی کے اوصاف کی موجودگی ہے کہ رحم کر تو اہل زمیں پر کہ خدا خوش ہوتا ہے عرش بریں پر

Related Post